ہوم / بین الاقوامی / نائجر میں فوجی اڈے پر حملہ، 71 فوجی ہلاک

نائجر میں فوجی اڈے پر حملہ، 71 فوجی ہلاک

نائجر کے ایک فوجی اڈے پر حملے میں 71 فوجی ہلاک اور 12 زخمی ہو گئے۔ نائجر کی تاریخ میں پہلی بار اس طرح کا واقعہ پیش آیا کہ اس کے فوجی اڈے پر حملے میں اتنی بڑی تعداد میں فوجی ہلاک ہو گئے۔ ابھی تک کسی گروپ نے حملے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔ حکومت کا کہنا ہے کہ القاعدہ اور داعش کی طرف سے فوجی اڈوں پر حملے کا خدشہ تھا۔ پچھلے سال میں ان دہشت گرد تنظیموں کے شدت پسندوں نے ساہِل ریجن میں فوجی اڈے پر حملے کی کوشش کی تھی۔ اس فوجی اڈے پر کئی غیر ملکی فوجی بھی موجود تھے جس کی وجہ سے حملے کا ناکام بنا دیا گیا تھا۔ تجزیہ کاروں کے مطابق نائجر میں بغاوت کے شعلے بھڑک رہے تھے اور ان میں مسلسل شدت آ رہی تھی۔ وزیر دفاع آئیزو فو کاٹامبے نے بی بی سی کو بتایا کہ حملے میں کئی حملہ آوروں کو شناخت کیا گیا ہے۔ جس فوجی اڈے پر حملہ ہوا وہ مالی کی سرحد کے قریب ہے۔ نائجر حکومت کے مطابق یہ ایک دہشت گرد حملہ تھا جس میں 71 فوجی مارے گئے۔ خطے میں مسلح علحیدگی پسند تحریکیں اپنے زوروں پر ہیں۔ 2012 سے ان تحریکوں میں اس وقت تیزی آئی جب مالی میں ایک فرانسیسی فوجی قافلے کو نشانہ بنایا گیا جس کے بعد فرانس نے یہاں سے اپنی فوج نکال لی تھی۔2015 میں مختلف علحیدگی پسند تحریکوں کے درمیان ایک امن معاہدہ طے پایا تھا لیکن اس پر کبھی بھی عمل درآمد نہیں ہو سکا۔ علحیدگی پسند تحریکوں میں شدت آتی گئی اور یہ مالی، برکینو فاسو اور نائجر تک پھیل گئیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے