ہوم / تازہ ترین / اسمبلی پہلے نیا وزیراعظم منتخب کرے گی پھر آرمی ایکٹ پر نئی قانون سازی ہو گی، بلاول بھٹو

اسمبلی پہلے نیا وزیراعظم منتخب کرے گی پھر آرمی ایکٹ پر نئی قانون سازی ہو گی، بلاول بھٹو

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ اسمبلی پہلے نئے وزیراعظم کو منتخب کرے گی پھر آرمی ایکٹ پر نئی قانون سازی کی جائے گی۔ اسلام آباد میں اپنے والد آصف زرداری سے پمز اسپتال میں ملاقات کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے بلاول بھٹو نے کہا کہ جو حکومت ایک نوٹی فکیشن تین ماہ میں نہیں بنا سکتی وہ آرمی ایکٹ جیسے پیچیدہ قانون میں نئی ترمیم کیسے کر سکتی ہے۔ وزیراعظم عمران خان اپوزیشن سے بالکل بات چیت کیلئے تیار نہیں ہیں۔ وہ ابھی تک کنٹینر پر کھڑے ہیں۔ ایسے میں حکومت اور اپوزیشن کیسے نئی قانون سازی کر سکتے ہیں۔ پیپلز پارٹی کو سپریم کورٹ کے فیصلے کا انتظار ہے جیسے ہی تحریری فیصلہ آئے گا اس کی روشنی میں آرمی ایکٹ پر قانون سازی میں مدد ملے گی۔ پیپلز پارٹی 27 دسمبر کو لیاقت باغ میں ایک واضح پیغام دے گی اور وہ پیغام یہ ہے کہ پہلے وزیراعظم تبدیل ہو گا پھر کوئی دوسری آئینی و قانونی تبدیلی ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ آصف زرداری سے سیاسی صورتحال پر بات ہوئی ہے۔ پارٹی اپنے نظریئے اور موقف سے پیچھے ہٹنے کو بالکل تیار نہیں ہے۔ بلاول نے کہا کہ نون لیگ نے اپوزیشن کی تمام جماعتوں سے مشاورت کے بعد چیف الیکشن کمشنر کیلئے تین نام بھیجے ہیں۔ وزیراعظم کے رویئے سے ملک اور اداروں کا نقصان ہو رہا ہے۔ اس کا اندازہ اس بات سے لگائیں کہ دو ماہ ہو گئے الیکشن کمیشن کے دو ممبرز ابھی تک متعین نہیں ہو پائے اور الیکشن کمیشن فی الحال غیر فعال ہے کیونکہ یہ مکمل نہیں ہے۔ وزیراعظم اپوزیشن سے اس معاملے پر نہ مشاورت کرنا چاہتے ہں اور نہ ہی کوئی بات کرنا چاہتے ہیں۔ ایسے میں پارلیمنٹ کیسے ایک اہم قانون بنانے میں کیسے اپنا کردار ادا کر سکتی ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ اسمبلی پہلے نیا وزیراعظم منتخب کرے گی پھر آرمی ایکٹ میں ترمیم ہو گی۔ بلاول نے کہا کہ پی ٹی آئی کی فارن فنڈنگ کا کیس پانچ سال سے چل رہا ہے ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں آیا۔ ادھر اپوزیشن کے خلاف روز نئے کیس بن رہے ہیں اور فیصلے دھڑا دھڑ آ رہے ہیں۔ بعض ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی جلد ہی اسلام آباد ہائی کورٹ میں آصف زرداری کی طبی بنیادوں پر رہائی کیلئے درخواست دائر کرے گی۔ دوسری طرف حکومت نے آرمی ایکٹ میں ترمیم کے حوالے اپوزیشن سے بات چیت کیلئے ایک تین رکنی کمیٹی بنا دی ہے جو اپوزیشن کی تمام جماعتوں سے انفرادی طور پر ملاقاتیں کرے گی۔

یہ بھی چیک کریں

جج ارشد ملک ویڈیو اسکینڈل:نواز شریف کی سزا کے خلاف درخواست سماعت کیلئے منظور

نیب کے سابق جج ارشد ملک کی ویڈیو سامنے آنے کے بعد نواز شریف نے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے