ہوم / بین الاقوامی / ماحولیاتی تبدیلی: اسپین میں پندرہ روز عالمی کانفرنس شروع

ماحولیاتی تبدیلی: اسپین میں پندرہ روز عالمی کانفرنس شروع

ماحولیاتی تبدیلی پر اسپین کے دارالحکومت میڈرڈ میں ایک عالمی کانفرنس شروع ہو گئی ہے جس میں سیاسی رہنماوٗں سمیت اقوام متحدہ کے ماحولیات سے متعلق سفیروں کی بڑی تعداد شریک ہو رہی ہے۔ دنیا بھر سے 29 ہزار مندوبین اس کانفرنس میں شریک ہو رہے ہیں۔ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انٹونیو گوٹیرس نے کہا ہے کہ ماحولیاتی تبدیلی کے حوالے سے دنیا ایک بڑے بحران میں داخل ہو چکی ہے۔ بڑھتی ہوئی ماحولیاتی حدت سے صرف افریقہ میں قحط سالی اور بڑے خوفناک بحران کا سامنا ہے۔ صرف افریقہ میں 3 کروڑ 30 لاکھ لوگوں کو خوراک کی فراہمی کا مسئلہ ہے۔ اس علاقے میں بھوک و افلاس نے ڈیرے جما لئے ہیں جس کی بڑی وجہ صرف اور صرف ماحولیاتی تبدیلی ہے۔ سمندری طوفان اور خشک سالی آنے والے دنوں میں دو بڑے بحران ہوں گے جن کا دنیا سامنا کرے گی اور یہ  بحران انسانی المیوں کی بنیاد بنیں گے۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا کہ ماحولیاتی تبدیلی آ چکی ہے اب سیاسی رہنماوٗں کو اپنا کردار ادا کرنا ہے۔ اگلے آنے والے بارہ ماہ انتہائی اہم ہیں۔

 بڑے صنعتی ممالک کو گرین ہاوٗسز پر کنٹرول کرنا ہو گا تاکہ فضا میں کاربن کی مقدار کو کم کیا جا سکے۔ انہوں نے سمندر اور زمین سے مزید قدرتی خزانے نکالنے کے بجائے توانائی کے متبادل ذرائع پر انحصار بڑھانے کی ضرورت پر زور دیا۔ ماحولیاتی تبدیلی کے پیرس معاہدے کے تحت تمام ممالک کو 2020 تک گرین ہاوٗسز کو کم کرنے اور ماحولیاتی تبدیلیوں کو کم کرنے کے حوالے سے اپنے منصوبے پیش کرنا ہیں۔ دنیا کے 50 ممالک کے سربراہ اس کانفرنس میں شریک ہوں گے تاہم امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کانفرنس میں شرکت سے انکار کر دیا ہے۔ امریکہ نے ایک ماہ قبل ہی پیرس معاہدے سے نکلنے کا اعلان کر دیا تھا جس پر دنیا بھر سے مذمت کی جار ہی ہے۔

یہ بھی چیک کریں

جج ارشد ملک ویڈیو اسکینڈل:نواز شریف کی سزا کے خلاف درخواست سماعت کیلئے منظور

نیب کے سابق جج ارشد ملک کی ویڈیو سامنے آنے کے بعد نواز شریف نے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے