ہوم / تازہ ترین / کلفٹن میں لڑکی کے اغوا اور نوجوان کو فائرنگ سے زخمی کرنے کی سی سی ٹی وی فوٹیج منظر عام پر آ گئی

کلفٹن میں لڑکی کے اغوا اور نوجوان کو فائرنگ سے زخمی کرنے کی سی سی ٹی وی فوٹیج منظر عام پر آ گئی

کراچی کے پوش علاقے ڈیفنس میں نوجوان کو زخمی کرکے لڑکی کو اغواء کرکے لے جانے کی سی سی ٹی وی فوٹیج منظر عام پر آگئی۔ گذشتہ روز ڈیفنس بخاری کمرشل میں کار سوار ملزمان ایک نوجوان کو گولی مار کر اس کے ساتھ موجود لڑکی کو اغواء کر کے فرار ہو گئے تھے تاہم 24 گھنٹے گزرنے کے باوجود اغواء ہونے والی لڑکی کا سراغ نہیں مل سکا ہے۔ واضح رہے کہ نوجواں حارث کا تعلق اردو اسپیکنگ کمیونٹی سے ہے جبکہ دعا منگی سندھی کمیونٹی سے تعلق رکھتی ہیں۔ خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ دعا منگی کو ان کی کمیونٹی کے لوگ غیرت کے نام پر اغوا کر کے لے گئے ہیں۔  ڈیفنس میں ہونے والے واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج منظر عام پر آگئی۔ سی سی ٹی وی فوٹیج میں دیکھا جاسکتا ہے کہ دعا اور زخمی حارث چہل قدمی کررہے ہیں، دونوں جیسے ہی گلی میں مڑے تو ملزمان نے فائرنگ کی۔ دوسری جانب واقعے کا مقدمہ زخمی حارث کے والد عبدالفتح کی مدعیت میں درخشاں تھانے میں درج کرلیا گیا ہے۔ ایف آئی آر میں عبد الفتح نے مؤقف اپنایا کہ حارث نے گولی لگنے کی اطلاع مجھے دی، بیٹے سے بات ہی کررہا تھا کہ تو پیچھے سے کسی کی آواز آئی کہ اسے اسپتال لے جا رہے ہیں۔ اُدھر تفتیشی ٹیم نے واقعے کی جگہ کا دورہ کیا جہاں سے نوجوان حارث کو لگنے والی گولی کا خول مل گیا۔ پولیس کے مطابق اغواء کے مقام سے ملنے والا گولی کا خول نائن ایم ایم پستول کا ہے، تفتیشی افسران نے ڈیفنس کے چائے خانہ کا بھی دورہ کیا اور ملازمین اور دیگر افراد سے بھی پوچھ گچھ کی۔ پولیس نے بتایا کہ زخمی نوجوان حارث اور مغوی دعا کا آرڈر لینے والے ویٹر کا بیان بھی لیا گیا ۔ ویٹر کا بیان میں کہنا تھا کہ حارث اور دعا 4 ماہ سے مستقل آرہے تھے اور اس دوران کبھی کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا، دعا منگی اور حارث ہمیشہ اچھے اخلاق سے پیش آتے تھے، ان کے ساتھ اکثر ایک خاتون اور ہوتی تھیں۔

یہ بھی چیک کریں

جج ارشد ملک ویڈیو اسکینڈل:نواز شریف کی سزا کے خلاف درخواست سماعت کیلئے منظور

نیب کے سابق جج ارشد ملک کی ویڈیو سامنے آنے کے بعد نواز شریف نے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے